بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

گارنٹی پر خریدوفروخت کا حکم

گارنٹی پر خریدوفروخت کا حکم

سوال

کیا فرماتے ہیں علماء کرام ومفتیان عظام مندرجہ ذیل مسئلہ کے بارے میں کہ آج کل جو چیزیں گارنٹی پر فروخت کی جاتی ہے اور گارنٹی کی مدت کے دوران اگر وہ چیز خراب ہو جائے تو اس کے بدلے میں مشتری کو دوسری چیز دے دی جاتی ہے شرعاً یہ کیسا ہے؟

جواب 

گارنٹی پر خریدنے اور بیچنے کی حقیقت یہ ہے کہ بائع اپنے اوپر اس بات کو لازم کر لیتا ہے کہ اتنی مدت کے دوران اگر اس چیز میں کوئی خرابی پائی گئی تو میں واپس لے لوں گا یا درست کروا دوں گا ، یہ بیع جائزہے ، کیوں کہ اگر بائع ایسے عیب کی وجہ سے بھی واپس لینے پر راضی ہو جو مشتری کے پاس جاکر پیدا ہوا، یااس کی اصلاح پر راضی ہو، تو یہ اس کی طرف سے اپنے اوپر رد اصلاح کا التزام ہے اور ایسا التزام درست ہوتا ہے۔ فقط واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء جامعہ فاروقیہ کراچی