بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

محرم الحرام میں چاول، شربت وغیرہ بنانا اور تقسیم کرنا

محرم الحرام میں چاول، شربت وغیرہ بنانا اور تقسیم کرنا

سوال

کیا فرماتے ہیں علماء کرام اس مسئلے کے بارے میں کہ محرم الحرام کے مہینے میں خصوصاً پہلے عشرہ میں کچھ لوگ ( جو علماء حق سے تعلق رکھنے والے ہیں ) اپنے گھریلو کھانے کے علاوہ مختلف چیزیں بناتے ہیں، مثلاً: چاول، چنے، شربت وغیرہ اور اسے اپنے رشتہ داروں اور پڑوسیوں کو بھیجتے ہیں اور کہتے ہیں کہ الله کے نام پر بنائی ہے اور اس کا ثواب اماموں کو بھیج رہے ہیں۔ کیوں کہ عموماً ان دنوں میں فرقہ باطلہنذر ونیاز وغیرہ کرتے ہیں،تو کیا علماء حق سے تعلق رکھنے والے لوگ ان دنوں میں یہ کام کرنے سے اس حدیث (من تشبہ بقوم فھو منھم“ کا مصداق بن سکتے ہیں یا نہیں؟ او ر ان دنوں میں یہ کام کرنا علماء حق سے تعلق رکھنے والوں کے لیے جائز ہے یا ناجائز؟

جواب

واضح رہے کہ محرم الحرام میں مذکورہ اشیاء ( چاول، چنے، شربت وغیرہ) بنانے اور تقسیم کرنے میں فی نفسہ کوئی حرج نہیں ہے، البتہ فرقہ باطلہ کا شعار بن چکا ہے، اور شریعت مطہرہ نے کفار اور فساق کے ساتھ کسی بھی امر میں مشابہت اختیا رکرنے کو سخت گناہ اور ناجائز قرار دیا ہے، لہٰذا اس سے مکمل طور پر اپنے آپ کو بچانا چاہیے اور جو لوگ ان کا یہ شعار اپنائیں گے وہ یقیناً اس حدیث ”من تشبہ بقوم فھو منھم“ کا مصداق بنیں   گے۔ فقط واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء جامعہ فاروقیہ کراچی