بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

غیر شرعی بال کاٹنے والے اور داڑھی کاٹنے والےنائی کی اجرت کا حکم

غیر شرعی بال کاٹنے والے اور داڑھی کاٹنے والےنائی کی اجرت کا حکم

سوال

کیا فرماتے ہیں مفتیانِ کرام اس   مسئلہ کے بارے میں کہ اگر کوئی درزی شلوار کی لمبائی کا ناپ ٹخنے کے نیچے تک لیتا ہو جو کہ شرعاً ناجائز ہے،اور اسی طرح  اگر کوئی نائی سر کے بال غیر شرعی طریقے پر کاٹے اور داڑھی بھی مونڈتا ہو، جو کہ ناجائز ہے،تو  آیا اس  ناجائز  عمل پر اس کا اجرت لینا جائز ہوگا یا نہیں؟ اور اگر اجرت لے لے تو یہ حلال ہوگا یا حرام ؟اور اگر کوئی شخص درزی کے پاس صرف شلوار بنوائے تو اس پر اجرت لینے کا کیا حکم ہوگا؟

 

جواب

واضح رہے کہ درزی کا شلوار کی لمبائی کا  ناپ ٹخنے کے نیچے لینے میں شرعا ً کوئی حرج نہیں ہے، البتہ اگر پہننے والا ٹخنے سے نیچے شلوار لٹکائے تو اس کا گناہ پہننے والے پر ہوگا، باقی درزی کے لیے صرف شلوار سینے کی اجرت لینا جائز اور درست ہے۔ غیر شرعی بال اور داڑھی کاٹنے والے نائی کے لیے اجرت لینا جائز نہیں ہے اور اس کی آمدنی بھی حلا ل نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء جامعہ فاروقیہ کراچی

فتوی نمبر: 168/326