بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

عورت کے لیے دعوت میں شرکت کرنے کی شرائط

عورت کے لیے دعوت میں شرکت کرنے کی شرائط

سوال

کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام مندرجہ ذیل مسئلہ میں اگر رشتہ داروں یا دوستوں کے ہاں دعوتِ ولیمہ یا اور کوئی دعوت ہو اور عورتوں کے لیے وہاں پردے کا انتظام ہو، تو کیا پردے میں عورت شرکت کے لیے جاسکتی ہے؟ ایسے ہی ممکن پردے میں رشتہ دار یا احباب کی دعوت کے موقع پر، یا موت کے موقع پر عورت میت کی رشتہ دار عورتوں کے پاس جا کر مسنون طریقے سے شرکت کرسکتی ہے؟ او ران کی تعزیت کرسکتی ہے؟

جواب 

دعوت خواہ ولیمہ کی ہو یا کوئی اور، بہر صورت احادیث میں دعوت قبول کرنے کی ترغیب آئی ہے، مگر درج ذیل شرائط کے ساتھ:
1..عورت پردے میں جائے ۔ 2..دعوت کی جگہ میں عورتوں کے لیے الگ پردے کا انتظام ہو ۔ 3..میوزک پروگرام نہ ہو۔ 4..میزبانی کرنے والے کی آمدنی حرام نہ ہو۔ 5..کسی کی شرکت سے شرکاء میں سے کسی کی دل آزاری نہ ہوتی ہو۔ 6..وہاں شراب نوشی نہ ہو۔ 7..ریشمی قالین وہاں نہ بچھائی گئی ہو۔ 8..مجلس دعوت میں خلاف سنت کسی کام کا ارتکاب نہ کیا جائے۔

اسی طرح تعزیت کرنا ایک مسلمان کا دوسرے پر حق ہے، اس لیے پردے میں جاکر سنت کے مطابق تعزیت کرسکتی ہے۔ فقط واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء جامعہ فاروقیہ کراچی