بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

اکثر چوری، ڈکیتی کے موبائل فون بیچنے والی دکان یا مارکیٹ سے موبائل فون خریدنے کا حکم

اکثر چوری، ڈکیتی کے موبائل فون بیچنے والی دکان یا مارکیٹ سے موبائل فون خریدنے کا حکم

سوال

 کیا فرماتے ہیں علمائے کرام اس مسئلے کے بارے میں کہ کسی ایسی دوکان یا مارکیٹ سے موبائل خریدنا کیساہے جہاں اکثر چوری، ڈکیتی کے موبائل آتے رہتے ہیں؟

جواب

کسی ایسی دوکان یا مارکیٹ سے موبائل فون خریدنا جہاں اکثر چوری، ڈکیتی کے موبائل فون بیچے جاتے ہیں، جائز نہیں ہے، ہاں! اگر اس دوکان یا مارکیٹ میں کچھ موبائل فون ڈکیتی کے ہوں اور باقی اکثر موبائل فون چوری ڈکیتی کے نہ ہوں تو اس صورت میں بھی جواز اس وقت ہے جب خریدار کو معلوم نہ ہو کہ چوری کیا ہوا موبائل فون خرید رہا ہوں، اگر خریدار کو معلوم ہو کہ میں جو موبائل فون خرید رہا ہوں وہ چوری کیا ہوا موبائل فون ہے تو اس کے لیے خریدنا ہرگز جائز نہیں۔ فقط واللہ اعلم بالصواب

دارالافتاء جامعہ فاروقیہ کراچی